Sharab ke Tibbi Nuqsanaat

شراب کے ایک گھونٹ کا عذاب و شراب کے طبی نقصانات

شراب کے ایک گھونٹ کا عذاب

تاجدارِ نبوّت، ماہ رسالت ﷺ کا فرمان ہے ،”اللہ پاک نے مجھے تمام جہان والوں کیلئے رحمت اورھدایت بناکر بھیجا ہے، مجھے اس لئے مبعوث فرمایا ہے کہ میں گانے بجانے کے آلات اور جاہلیت کے کاموں کو مٹا دوں، میرے پروردگار عزوجل نے اپنی عزت کی قسم یاد کر کے فرمایا ہے ،”میرا جو بندہ شراب کا ایک گھونٹ بھی پئے گا میں اسے اس کی مثل جہنم کا کھولتا ہوا پانی پلاؤں گا اور میرا جو بندہ میرے خوف سے شراب پینا چھوڑ دے گا میں اسے جنت میں اچھے رفقاء کے ساتھ(1)پاکیزہ شرابپِلاؤں گا ۔(2) المعجم الکبیر للطبرانی ج ۸ ص ۱۹۷حدیث ۷۸۰۳،۷۸۰۴

کلمہ نصیب نہ ہو

عزیز ساتھیو! اندیشہ ہے کہ شرابیوں اور شطرنج کھیلنے والوں وغیرہ کو مرتے وقت کلمہ نصیب نہ ہو۔ اس ضمن میں دو حکایات ملاحظہ ہوں :۔
حضرت علامہ محمد بن احمد ذہبی علیہ رحمۃ فرماتے ہیں
،ایک شخص شرابیوں کی صحبت میں بیٹھتا تھا جب اس کی موت کا وقت قریب آیا تو کسی نے کلمہ شریف کی تلقین کی تو کہنے لگا، “تم بھی پیو اور مجھے بھی پلاؤ۔ ” معاذ اللہ عزوجل بغیر کلمہ پڑھے مرگیا جب شرابیوں کی صحبت کا یہ حال ہے تو شراب پینے کا کیا وبال ہو گا !
ایک شطرنج کھیلنے والے کو مرتے وقت کلمہ شریف کی تلقین کی گئی تو کہنے لگا،” شاھک(3)یعنی تیرا بادشاہ یہ کہنے کے بعد اس کا دم نکل گیا ۔(4)ملخصاً کتاب الکبائر ص ۱۰۳

شراب کے طبی نقصانات

عزیز ساتھیو! اسلام نے شراب نوشی کو جو حرام قرار دیا ہے اس میں بے شمار حکمتیں ہیں، اب کفار بھی اس کے نقصانات کو تسلیم کرنے لگے ہیں، چنانچہ ایک غیر مسلم محقق کے تأثرات کے مطابق شروع شروع میں تو بدن انسانی شراب کے نقصانات کا مقابلہ کر لیتا ہے اور شرابی کو خوشگوار کیفیت مل جاتی ہے مگرجلد ہی داخلی(5)یعنی جسم کی اندرونیقوت برداشت ختم ہو جاتی اورمستقل مضر اثرات مرتب ہونے لگتے ہیں۔

شراب کا سب سے زیادہ اثر جگر(6)کلیجیپر پڑتا ہے اور وہ سکڑنے لگتا ہے ، گردوں پر اضافی بوجھ پڑتا ہے جو بالآخر نڈھال ہوکر انجام کار ناکارہ (7)FAIL ہو جاتے ہیں، علاوہ ازیں شراب کے استعمال کی کثرت دماغ کو متورم(8)یعنی سوجن میں مبتلاکرتی ہے، اعصاب میں سوزِش ہو جاتی ہے نتیجۃً اعصاب کمزور اور پھر تباہ ہو جاتے ہیں، شرابی کے معدہ میں سوجن ہو جاتی ہے، ہڈیاں نرم اور خستہ (9)یعنی بہت ہی کمزور ہو جاتی ہیں، شراب جسم میں موجود وٹامنز کے ذخائر کو تباہ کرتی ہے وٹامنB اورC اس کی غار تگری کا بالخصوص نشانہ بنتے ہیں۔

شراب کے ساتھ ساتھ تمباکو نوشی کی جائے تو اس کے نقصان دہ اثرات کئی گنا بڑھ جاتے ہیں اور ہائی بلڈ پریشر، سٹروک اور ہارٹ اٹیک کا شدید خطرہ رہتا ہے۔ بکثرت شراب پینے والا تھکن ، سر درد ، متلی اور شدت پیاس میں مبتلا رہتا ہے۔ بے تحاشہ شراب پی جانے سے دل اور عمل تنفس(10)سانس لینے کا عمل رک جاتا اور شرابی فوری طور پر موت کے گھاٹ اتر جاتا ہے۔

کر لے توبہ اور تو مت پی شراب    ہوں گے ورنہ دوجہاں تیرے خرا ب
جو جو آ کھیلے ، پئے ناداں شراب    قبر و حشر و نار میں پائے عذاب

حوالہ جات   [ + ]

اپنا تبصرہ بھیجیں