ربیع الاول

جب آپ ﷺ کی ولادت ہوئی تو کیا کیا معجزات ظاہر ہوئے؟

خا تَمُ المُر سَلین، رَحمۃٌ لِّلْعٰلمین، مَحبوبِ ربُّ الْعٰلمین، جنابِ صادِق و اَمین ﷺ قرارِ ہر قلبِ مَحزُون و غمگین بن کر۱۲ربیعُ النُّورشریف کو صبحِ صادِق کے وَقْت جہاں میں تشریف لائے اور آ کر بے سہاروں ، غم کے ماروں ، دُکھیاروں ، دلفِگاروں اور دَر دَر کی ٹھوکریں کھانے والے بے چاروں کی شامِ غریباں کو’’ صبحِ بہاراں ‘‘ بنادیا۔ ؎

مُعْجِزات

12ربیعُ النُّور شریف کواللہ عَزَّ وَجَلَّ کے نو ر ﷺ کی دنیا میں جلوہ گَری ہوتے ہی کُفر و ظُلمت کے بادَل چھٹ گئے ، شاہِ ایران’’ کِسر یٰ ‘‘ کے مَحَل پر زلزلہ آیا، چودہ کُنُگرے گر گئے ۔ ایران کاجو آتَش کَدہ ایک ہزار سال سے شُعلہ زَن تھا وہ بُجھ گیا ، دریائے ساوَہ خشک ہو گیا ، کعبے کو وَجْد آ گیا اور بُت سَر کے بَل گر پڑے۔ ؎
تیری آمد تھی کہ بیتُ اللہ مُجر ے کو جُھکا
تیری ہَیبت تھی کہ ہر بُت تھر تھر ا کر گِر گیا
(حدائق بخشش ص۴۱)

تاجدارِ رسالت ﷺ جہاں میں فضل و رَحمت بن کر تشریف لائے اور یقینا اللہ عَزَّ وَجَلَّ کی رَحْمت کے نُزُول کا دن خوشی و مسرَّت کا دن ہوتا ہے۔چُنانچِہ اللہ تبارَک وَتعالیٰ ارشاد فرماتا ہے :

قُلْ بِفَضْلِ اللہِ وَبِرَحْمَتِہٖ فَبِذٰلِکَ فَلْیَفْرَحُوۡا ؕ ہُوَ خَیۡرٌ مِّمَّا یَجْمَعُوۡنَ

ترجَمۂ کنزالایمان: تم فرماؤ اللہ (عَزَّ وَجَلَّ)ہی کے فَضل اور اُسی کی رحمت اور اِسی پر چاہئے کہ خوشی کریں۔وہ ان کے سب دَھن دولت سے بہتر ہے۔
﴿۵۸﴾ (پ۱۱، یونس:۵۸)

اللہُ اکبر! رَحمت ِخداوندی پر خوشی منانے کا قراٰنِ کریم حُکم دے رہا ہے اور کیا ہمارے پیارے آقا ﷺ سے بڑھ کر بھی کوئی اللہ عَزَّ وَجَلَّ کی رَحمت ہے؟دیکھئے مقدَّس قراٰن میں صاف صاف اِعلان ہے:

وَمَاۤ اَرْسَلْنٰکَ اِلَّا رَحْمَۃً لِّلْعٰلَمِیۡنَ

ترجَمۂ کنزالایمان: اور ہم نے تمھیں نہ بھیجا مگر رَحمت سارے جہان کیلئے ۔
﴿۱۰۷﴾ (پ۱۷، الانبیاء:۱۰۷)

This post has been Liked 0 time(s) & Disliked 0 time(s)

اپنا تبصرہ بھیجیں