پل صراط جنت کا راستہ ہے ہم سب نے وہاں سے گزرنا ہے

پل صراط جنت کا راستہ ہے ہم سب نے وہاں سے گزرنا ہے

جہنم کے اوپر ایک پل ہے اس کو”صراط“ کہتے ہیں۔ وہ بال سے زیادہ باریک تلوار سے زیادہ تیز ہے۔ سب کو اس پر گزرنا ہے جنت کا یہی رستہ ہے۔ اس پل پر گزرنے میں لوگوں کی حالت جداگانہ ہوگی جس درجہ کا شخص ہوگا اس کیلئے ایسی ہی آسانی یا دشواری ہوگی بعضے تو یوں گزر جائیں گے جیسے بجلی کوند گئی (بجلی کی چمک)۔ ابھی ادھر تھے، ابھی ادھر پہنچے۔

بعضے ہوا کی طرح، بعضے تیز گھوڑے کی طرح ، بعضے آہستہ آہستہ ، بعضے گرتے پڑتے لرزتے لنگڑاتے اور بعضے جہنم میں گر جائیں گے ۔ کفّار کے لئے بڑی حسرت کا وقت ہوگا جب وہ پل سے گزر نہ سکیں گے اور جہنم میں گر پڑیں گے اور ایمانداروں کو دیکھیں گے کہ وہ اسی پل پر بجلی کی طرح گزر گئے یا تیز ہوا کی طرح اڑ گئے یا سریع السیر (تیز رفتار) گھوڑے کی طرح دوڑ گئے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں