غم خواری کرنے کے بارے میں احادیث مبارکہ

Gham Khawari karna

(1) حضرت سیدنا جابررضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ ﷺ نے فرمایا ”جو کسی غمزدہ شخص سے تعزیت (یعنی اس کی غم خواری)کر ے گا اللہ عزوجل اسے تقوی کا لباس پہنائے گا اور روحو ں کے درمیان اس کی روح پر رحمت فرمائے گا اور جو کسی مصیبت زدہ سے تعزیت کریگا اللہ عزوجل اسے جنت کے جوڑوں میں سے دوایسے جوڑے عطا پہنائے گا جن کی قیمت دنیا بھی نہیں ہوسکتی۔“
(المعجم الاوسط ،رقم ۹۲۹۲،ج۶، ص ۴۲۹ )

(2) حضرت عبداللہ رضی اللہ عنہ سے مروی ہے کہ سرورِ عالم ﷺ نے فرمایا ”جس نے کسی مصیبت زدہ کی تعزیت کی تو اسے مصیبت زدہ کے برابر اجر ملے گا ۔“
(الترغیب والترہیب، رقم ۶،ج۴،ص۱۷۹)

(3) حضرت ثوبان رضی اللہ عنہ سے مروی ہے کہ حضور اقدس ﷺ نے فرمایا ”مسلمان جب اپنے مسلمان بھائی کی عيادت کو گيا تو واپس ہونے تک ہميشہ جنت کے پھل چننے ميں رہا۔“
(بخاری ،رقم الحدیث ۲۵۶۸، ص۱۳۸۹ )

(4) حضرت علی رضی اللہ عنہ سے روايت ہے کہ سرورِکونین ﷺ نے فرمايا ”جو مسلمان کسی مسلمان کی عيادت کے ليے صبح کو جائے تو شام تک اس کے ليے ستر ہزار فرشتے استغفار کرتے ہيں اور شام کو جائے تو صبح تک ستر ہزار فرشتے استغفار کرتے ہيں اور اس کے ليے جنت ميں ايک باغ ہوگا۔“
(سنن الترمذی، رقم الحدیث ۹۷۱ ،ج۲، ص۲۹۰ )

اللہ تعالیٰ ہمیں اپنی زبان کسی غم زدہ کی غم خواری کرنے میں استعمال کرنے کی توفیق عطا فرمائے ۔ آمین بجاہ النبی الامین ﷺ

اپنا تبصرہ بھیجیں