چور نے جب نماز پڑھی (حکایت) مع نماز کے مختلف 25 فضائل

چور کی نماز (حکایت) مع نماز کے مختلف 25 فضائل

حضرت سیدتنا رابعہ بصریعہ رحمۃ اللہ علیھا کے گھر رات کے وقت ایک چور داخل ہوا، اس نے ہر طرف تلاشی لی لیکن سوائے ایک لوٹے کے کوئی چیز نہ پائی۔ جب وہ جانے لگا تو آپ نے فرمایا: اگر تم چور ہو تو خالی نہیں جاؤ گے۔ اس نے کہا: مجھے تو کوئی چیز نہیں ملی۔

فرمایا: ”اے غریب! اس لوٹے سے وضو کر کے کمرے میں داخل ہوجا اور دو رکعت نماز ادا کر، یہاں سے کچھ نہ کچھ لے کر جائے گا گا۔” اس نے وضو کیا اور جب نماز کے لیے کھڑا ہوا تو حضرت رابعہ رحمتہ اللہ علیہا نے دعا کی: “اے میرے پیارے پیارے اللہ! یہ شخص میرے پاس آیا لیکن اس کو کچھ نہ ملا، اب میں نے اسے تیری بارگاہ میں کھڑا کر دیا ہے، اسے اپنے فضل و کرم سے محروم نہ کرنا۔“

رات کا آخری حصہ

اس چور کو عبادت کی ایسی لذت نصیب ہوئی کہ رات کے آخری حصے تک وہ نماز میں مشغول رہا۔ سحری کے وقت آپ اس کے پاس تشریف لے گئیں تو وہ حالت سجدہ میں اپنے نفس کو ڈانتے ہوئے کہہ رہا تھا: ”اے نفس! جب میرا رب کریم مجھ سے پوچھے گا میری نافرمانیاں کرتے ہوئے تجھے حیا نہ آئی! تو اگرچہ میری مخلوق سے گناہ چھپاتا رہا، مگر اب گناہوں کی گٹھڑی لے کر میری بارگاہ میں پیش ہے! اے نفس! اگر رب العزت مجھے ملامت کرے گا اور اپنی بارگاہ رحمت سے مجھے دور کر دے گا تو میں کیا کروں گا؟“

جب وہ فارغ ہوگیا تو آپ نے پوچھا: اے بھائی! رات کیسی گزری؟ بولا: ”میں عاجزی اور انکساری کے ساتھ اپنے رب باری کی بارگاہ میں کھڑا رہا تھا تو اس نے میرا بن درست کر دیا میری معذرت قبول فرما ری اور میرے گناہ بخش دیئے اور مجھے میرے مقصد تک پہنچا دیا۔“

پھر وہ شخص چہرے پر حیرانی و پریشانی کے آثار لیے چلا گیا۔ جب حضرت رابعہ بصریہ رحمۃ اللہ علیہ نے بارگاہ الہی میں ہاتھ اٹھا کر عرض کی: اے میرے پیارے پیارے اللہ! یہ شخص تیری بارگاہ میں ایک گھڑی کھڑا ہوا تو تو نے اسے قبول کر لیا اور میں کب سے تیری بارگاہ میں کھڑی ہوں، کیا تو نے مجھے بھی قبول فرما لیا ہے؟ اچانک اپنے دل کے کانوں سے یہ آواز سنی: اے رابعہ! ہم نے اسے تیری ہی وجہ سے قبول کیا اور تیری ہی وجہ سے اپنی نزدیکی عنایت فرمائی۔
(کایتیں اور نصیحتیں ص 302 ملخصا)

نماز کے مختلف 25 فضائل

  1. اللہ پاک کی خوشنودی کا سبب نماز ہے۔
  2. مکی مدنی آقا ﷺ کی آنکھوں کی ٹھنڈک نماز ہے ہے۔
  3. انبیاء کرام علیھم السلام کی سنت نماز ہے۔
  4. نماز اندھیری قبر کا چراغ ہے۔
  5. نماز عذاب قبر سے بچاتی ہے۔
  6. نماز قیامت کی دھوپ میں سایہ ہے۔
  7. نماز پل صراط کے لئے آسانی ہے
  8. نماز نور ہے
  9. نماز جنت کی کنجی ہے
  10. نماز جہنم کے عذاب سے بچاتی ہے
  11. نماز سے رحمت نازل ہوتی ہے
  12. اللہ پاک بروز قیامت نمازی سے راضی ہوگا
  13. نماز دین کا ستون ہے
  14. نماز سے گناہ معاف ہوتے ہیں
  15. نماز دعاؤں کی قبولیت کا سبب ہے
  16. نماز بیماریوں سے بچاتی ہے
  17. نماز سے بدن کو راحت ملتی ہے
  18. نماز سے روزی میں برکت ہوتی ہے
  19. نماز بھی حیائی اور برے کاموں سے بچاتی ہے
  20. نماز شیطان کو ناپسند ہے
  21. نماز قبر کے اندھیرے میں تنہائی کی ساتھی ہے
  22. نماز نیکیوں کے پلڑے کو وزنی بنا دیتی ہے
  23. نماز مومن کی معراج ہے
  24. نماز کا وقت پر ادا کرنا تمام اعمال سے افضل ہے
  25. نماز کے لئے سب سے بڑی نعمت یہ ہے کہ اسے بروز قیامت اللہ پاک کا دیدار ہوگا۔

اللہ پاک ہمیں پانچ وقت کی نماز باجماعت ادا کرنے کی توفیق عطا فرمائے۔ آمین

 
ثواب کی نیت سے شیئر کرتے جائیں۔۔
Share on Facebook
Facebook
Tweet about this on Twitter
Twitter
Share on Reddit
Reddit
Share on LinkedIn
Linkedin
Buffer this page
Buffer
Digg this
Digg
Share on Tumblr
Tumblr
Share on Yummly
Yummly
Share on VK
VK
Email this to someone
email

اپنا تبصرہ بھیجیں