کسب حلال کی فضیلت

کسب حلال

اسلام جہاں زندگی کے ہر پہلو میں ہماری رہنمائی کرتا ہے وہیں ہمیں ہمیشہ کسب حلال (یعنی حلال رزق) کمانے کی ترغیب بھی دیتا ہے۔ اسلام میں کسب حلال کو بہت زیادہ اہمیت و فضیلت دی گئی ہے اور اسے ایک بڑی نیکی اور باعث اجر و ثواب قرار دیا گیا ہے۔

اللّہ پاک قرآن پاک میں ارشاد فرماتا ہے:

وَ مَا مِنْ دَآبَّةٍ فِی الْاَرْضِ اِلَّا عَلَى اللّٰهِ رِزْقُهَا

ترجمہ: اور زمین پر چلنے والا کوئی جاندار ایسا نہیں جس کا رزق اللہ کے ذمہ کرم پر نہ ہو (1)

کسب حلال احادیث کی روشنی میں

  1. نبی کریم ﷺ نے ارشاد فرمایا: سب سے زیادہ پاکیزہ کھانا وہ ہے جو اپنی کمائی سے کھاؤ۔ (2)
  2. بے شک اللہ پاک مسلمان پیشہ ور کو دوست رکھتا ہے۔ (3)
  3. جسے مزدوری سے تھک کر شام آئے اُس کی وہ شام، شام مغفرت ہوتی ہے۔ (4)
  4. پاک کمائی والے کے لیے جنت ہے۔ (5)
  5. کچھ گناہ ایسے ہیں جن کا کفارہ نہ نماز ہو، نہ روزے، نہ حج، نہ عمرہ۔ ان کا کفارہ وہ پریشانیاں ہوتی ہیں جو آدمی کو تلاش معاش حلال میں پہنچتی ہیں۔ (6)

ان احادیث سے کسب حلال کی فضیلت کا خوب اندازہ ہوتا ہے۔ حلال روزی حاصل کرنا اور اس سے کھانا ایمان کا ایک اہم حصہ ہے۔ حلال روزی حاصل کرنے کے لیے محنت کرنا اور کسی جائز پیشے میں مشغول ہونا اللہ پاک کی رضامندی حاصل کرنے کا ایک بہترین طریقہ ہے۔ اس میں پیش آنے والی پریشانیاں بھی باعث اجر و ثواب ہیں۔ کسب حلال کی بہت ساری فضیلتیں و عظمتیں بیان کی گئی ہیں لیکن یاد رکھیں کہ جتنی فضلیت بیان کی گئی اتنی ہی کسب حرام یعنی حرام کمانے کی مذمت بھی بیان کی گئی ہے۔

مکاشفۃ القلوب میں ہے کہ آدمی کے پیٹ میں جب حرام لقمہ پڑا تو زمین و آسمان کا ہر فرشتہ اس پر لعنت کرے گا جب تک وہ اس کے پیٹ میں رہے گا اگر اسی حالت نے میں موت آگئی تو داخل جہنم ہو گا۔ دعا ہے کہ اللہ پاک ہمیں ہمیشہ کسب حلال کی توفیق عطا فرمائے اور کسب حرام سے بچائے۔ آمین

5/5 - (2 votes)

حوالہ جات

حوالہ جات
1 سورہ ھود ، آیت : 6
2 ترمذی، حدیث 1363
3 معجم اوسط، حدیث 8934
4 معجم اوسط، حدیث 7520
5 معجم کبیر، حدیث 4616
6 معجم کبیر، حدیث 102

توجہ فرمائیں! اس ویب سائیٹ میں اگر آپ کسی قسم کی غلطی پائیں تو ہمیں ضرور اطلاع فرمائیں۔ ہم آپ کے شکر گزار رہیں گے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں