دجال کس کو کہتے ہیں؟ اسکا دعویٰ اور کمالات

Dajjal دجال

دجال (Dajjal) مسیح کذاب (1)مسیح بمعنی اسم مفعول ہےیعنی ممسوح العین،ایک آنکھ کا کانا۔ حضرت عیسیٰ علیہ السلام کوجومسیح کہتےہیں وہاں مسیح بمعنی اسم فاعل ہےیعنی برکت کےلئےچھونےوالے،مُردوں کوزندہ اوربیماروں کواچھاکرنےوالے۔یہاں معنی ہوگاشعبدے دکھانےوالابڑاجھوٹا کانام ہے۔اس کی ایک آنکھ ہوگی۔ اور وہ کاناہوگا اوراس کی پیشانی پرک ا ف ر (3)یعنی کافر لکھا ہوگا۔ ہرمسلمان اس کوپڑھے گا،کافرکونظرنہ آئےگا۔

وہ چالیس دن میں تمام زمین میں پھرےگا۔ مگرمکّہ شریف اورمدینہ شریف میں داخل نہ ہوسکےگا۔ ان چالیس دن میں پہلا دن ایک سال کےبرابرہوگا، دوسرا ایک مہینہ کےبرابر،تیسرا ایک ہفتہ کےبرابر اورباقی دن معمول کےدنوں کےبرابر ہوں گے۔

دجال کادعویٰ

دجال (Dajjal) خدائی کادعویٰ کرےگااوراسکےساتھ ایک باغ اورایک آگ ہوگی، جس کانام وہ جنّت ودوزخ رکھےگا۔جواس پرایمان لائےگااس کووہ اپنی جنت میں ڈالےگا،جوحقیقت میں آگ ہوگی اورجواس کاانکار کرےگا اس کواپنی جہنم میں داخل کرےگا جوواقع میں آسائش کی جگہ ہوگی (2)اصل میں راحت وآرام کی جگہ ہوگیبہت سےعجائب(4)عجیب کی جمع ،حیرت انگیزچیزیں دکھائےگا۔

زمین سےسبزہ اُگائےگا۔ آسمان سےمینہ (5)بارش برسائےگا۔ مُردےزندہ کرےگا۔ایک مومن صالح (6)نیک اس طرف متوجہ ہوں گےاوران سےدجال (Dajjal) کےسپاہی کہیں گےکیاتم ہمارے رب پرایمان نہیں لاتے؟ وہ کہیں گے۔ میرےرب کےدلائل چھپےہوئےنہیں ہیں۔ پھروہ ان کوپکڑکردجال کےپاس لےجائیں گے۔ یہ دجال کودیکھ کرفرمائیں گےاے لوگویہ وہی دجال (Dajjal) ہے جس کارسول کریم ﷺ نےذکر فرمایاہے۔

دجال کےحکم سےان کوزدوکوب(7)مارپیٹ کیاجائےگا۔پھردجال (Dajjal) کہے گا کیا تم میرےاوپرایمان نہیں لاتے؟ وہ فرمائیں گےتومسیح کَذَّاب ہے۔ دجّال کےحکم سےان کاجسم مبارک سرسےپاؤں تک چیر کےدوحصےکردیاجائےگااور ان دونوں حصوں کےدرمیان دجال (Dajjal) چلےگا۔پھر کہےگااٹھ! تووہ تندرست ہوکراٹھ کھڑےہوں گے۔ تب دجال ان سےکہےگاتم مجھ پرایمان لاتےہو؟ وہ فرمائیں گےمیری بصیرت (8)بینائی ،عقلمندی اورزیادہ ہوگئی۔اےلوگو! یہ دجّال اب میرے بعد کسی کےساتھ پھرایسا نہیں کرسکتا۔پھر دجّال انہیں پکڑ کرذبح کرنا چاہےگااور اس پرقادرنہ ہوسکےگا۔

پھران کےدست وپا(9)ہاتھ اورپاؤں سےپکڑکراپنی جہنم میں ڈالےگا۔ لوگ گمان کریں گےکہ ان کوآگ میں ڈالا۔ مگردرحقیقت وہ آسائش کی جگہ ہوں گے۔ (10)کتاب العقائد، ص28

حوالہ جات[+]

دجال کس کو کہتے ہیں؟ اسکا دعویٰ اور کمالات” ایک تبصرہ

اپنا تبصرہ بھیجیں