جانور سے بدفعلی کرنا کیسا؟

جانور سے بدفعلی

جانور سے بدفعلی کرنا شریعت کو سخت ناپسند ہے. جیسا کہ حضرت عمرو بن ابی عمرورضی اللہ عنہ سے مروی ہے کہ رسول اللہ ﷺ کا فرمان ہے،” جو کسی جانور سے بدفعلی کرے، وہ ملعون ہے ۔ “ (1)

واٹس ایپ گروپ (ابھی جوائن کریں) Join Now
یوٹیوب چینل (ابھی سبکرائب کریں) Subscribe

اس کے بارے میں سخت سزا بیان کی گئی ہے چنانچہ حضرت ابن عباس رضی اللہ عنہ سے مروی ہے کہ رسول اللہ ﷺ نے ارشاد فرمایا:” تم جس شخص کو کسی جانور سے بد فعلی کرتا پاؤ تو فاعل ومفعول دونوں کو قتل کر ڈالو۔“ حضرت ابن عباس رضی اللہ عنہ سے عرض کی گئی :” اس میں جانور کا کیا قصور ہے؟“ آپ نے فرمایا : ”میں نے رسول اللہ ﷺ سے اس بارے میں کوئی بات تو نہیں سنی لیکن میرا گمان ہے کہ رسول اللہ ﷺ نے اسے ناپسند فرمایا کہ ایسے جانور کا گوشت کھایا جائے یا اس سے نفع اٹھایا جائے کہ جس کے ساتھ یہ عمل کیا گیاہو۔“ (2)

5/5 - (2 votes)

حوالہ جات

حوالہ جات
1 مستدرک ،کتاب الحدود،رقم ۸۱۱۷،ج۵،ص۵۰۹
2 ترمذی۔کتاب الحدود، باب ماجاء فیمن یقع علی البھیمۃ ،رقم۱۴۶۰،ج۳،ص۱۳۶

توجہ فرمائیں! اس ویب سائیٹ میں اگر آپ کسی قسم کی غلطی پائیں تو ہمیں ضرور اطلاع فرمائیں۔ ہم آپ کے شکر گزار رہیں گے۔

جانور سے بدفعلی کرنا کیسا؟” ایک تبصرہ

اپنا تبصرہ بھیجیں